ارریہ

تحفظ شریعت وویلفیئرسوسائٹی جوکی کی جانب سے سکٹیہ گاؤں میں آگزنی کے بعد ریلیف کی تقسیم

جوکی ہاٹ تھانہ کے تحت سکٹیہ گاؤں میں آگ لگنے سے تقریباً 43 گھر جل کر راکھ ہوگئے جس میں زیادہ تر رہائشی مکانات تھے. گھر کی تمام چیزیں چاہے وہ خوردنی اشیاء ہوں یا پھر پہننے اوڑھنے کی چیزیں یا پھر بستر پلنگ وغیرہ ساری چیزیں جل کر خاک ہوگئیں.
تنظیم تحفظ شریعت و ویلفیئر سوسائٹی جوکی ہاٹ و پلاسی کے تمام کارکنان روز اول سے ہی راحت رسانی کے کام میں لگے ہوئے ہیں، خبر ملتے ہی تحفظ شریعت کے کارکنان روزانہ کی بنیادی ضرورت کے اشیاء مثلاً کمبل، چادر اور کچھ خوردنی اشیاء جو میسر ہو سکا لے کر گئے، جس سے لوگوں کو بڑا سکون ملا کہ مشکل حالات میں علاقائی تنظیمیں ان کے دکھ درد میں شریک ہوئیں، مقامی لوگوں سے بات چیت کے دوران تحفظ شریعت کے ذمہ داران نے وعدہ کیا تھا کہ پھر سے وہ تمام لوگوں کے لیے ضروری اشیاء زندگی لے کر جائیں گے. اس کے بعد تحفظ کے اراکین نے علاقے میں ایک تحریک چلائی اور ان مجبور لوگوں کے لئے، کمبل، کپڑے، چپل، مڑھی، بالٹی، بلب، تار،ہولڈر، لنگی ساڑھی وغیرہ چیزیں دستیاب کی اور ایک راحت پیکج تیار کر کل تمام لوگوں میں تقسیم کیا گیا.
‌کسی کی تحقیر اور تضحیک نہ ہو اسی لئے تصویر کشی کو مکمل طور پر منع کر دیا گیا. اور کسی شخص کی تصویر نہیں لی گئی. الحمد للہ تمام پریشان حال لوگوں کی راحت رسانی کا کام تحفظ کے بینر تلے کیا گیا. تنظیم کے نوجوانوں نے اس کام کو پایہ تکمیل تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا، تنظیم کے کارکنان، مولانا عبدالوارث مظاہری سیکرٹری تحفظ شریعت، مولانا عبداللہ سالم صاحب چترویدی، مولانا عبدالسلام عادل ندوی، قاری امتیاز صاحب، حافظ منظور صاحب،حافظ سرور عالم اور ان کے تمام کپڑا تاجران، قاری کاشف نسیم، عبدالقدوس راہی، محمد صدام اجھوا، مولانا سرفراز صاحب، حافظ قیصر صاحب روائل ڈریسس، حافظ ابونصراور حافظ و ماسٹر ناصر صاحب نے بھر پور تعاون ساتھ دیا.

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close