حیدرآباد

اردوفکشن میں دکن کی نمائندگی کرنے والے بیگ احساس کے انتقال پراظہارتعزیت

حیدرآباد(پریس نوٹ ) اپنے افسانوں کے ناموں کے ذریعہ اردودانوں کولغت کھولنے پرمجبور کرنے والے افسانہ نگار پروفیسر بیگ کے احساس کے انتقال پر مختلف ادبی تنظیموں نے اظہارتعزیت کیا ہے۔ آل انڈیا اردوماس سوسائٹی فارپیس ،احمدعلی میموریل ایجوکیشنل سوسائٹی اور ماہنامہ تاریخ دکن سے وابستہ شخصیات ڈاکٹرمختاراحمدفردین ،محمدآصف علی،ڈاکٹرسیدحبیب امام قادری اورمحسن خان نے اپنے مشترکہ پیام میں کہاکہ آج سارے جہاں میں ادب میں دکن کی نمائندگی کرنے والی شخصیت ہم سے جدا ہوگئی ہے۔ ڈاکٹربیگ احساس ایک عظیم افسانہ نگارتھے۔ ان کے تاریخی افسانہ دخمہ کو ساہتیہ ایوارڈحاصل ہواتھا۔ ان کے افسانہ کوپڑھ کرکئی لوگوں نے سکندرآباد میں واقع پارسیوں کے قبرستان کا دورہ کیاتھا۔ حیدرآباد میں مجتبیٰ حسین اور ڈاکٹربیگ احساس ادب کی جوڑی تھے اوردونوں بھی ہم سے جدا ہوگئے ہیں۔

جامعہ عثمانیہ اور حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں سینکڑوں طلبہ نے ان کے پاس تعلیم حاصل کی اورآج وہ کئی بڑے عہدوں پرفائز ہیں۔انہوں نے کئی ممالک کا دورہ کیا۔ ماہنامہ سب رس کوبھی انہو ںنے بلند مقام پرپہنچایاتھا۔ خوشہ گندم ،حنظل اور دخمہ ان کے افسانوی مجموعے تھے۔ ان کے افسانے مختلف جامعات میں گریجویشن اورپوسٹ گریجویشن کے نصاب میں شامل ہیں۔ وہ ایک عظیم نقادتھے ۔دکن کی ادبی محفلوں میں ان کی کمی ہمیشہ محسوس کی جائے گی۔آل انڈیا اردوماس سوسائٹی فارپیس کے صدرڈاکٹرمختاراحمدفردین نے تلنگانہ ریاستی اردواکیڈیمی سے اپیل کی کہ بیگ احساس پرماہنامہ قومی زبان کا ایک خصوصی نمبر شائع کریں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close