ممبئی

ادھو ٹھاکرے کے خلاف تبصرہ معاملے میں نارائن رانے گرفتار ، بی جے پی اور شیو سینا کے کارکنوں میں تصادم

ممبئی ،24؍اگست (ہندوستان اردو ٹائمز) بھارتیہ جنتا پارٹی اور شیو سینا کے درمیان تلخی بڑھ رہی ہے، جو کبھی مہاراشٹر اور مرکز میں اقتدار میں حلیف پارٹی تھی۔ مرکزی وزیر نارائن رانے کے مہاراشٹر کے وزیراعلیٰ ادھو ٹھاکرے کے خلاف بیان پر منگل کو دونوں پارٹیوں کے کارکن ممبئی میں آپس میں لڑ پڑے۔ یہ بات قابل غور ہے کہ شیو سینا کے کارکنوں نے اس معاملے میں مرکزی وزیر رانے کے خلاف مقدمہ درج کرایا ہے۔ بعد میں اسی تناظر میں انہوں نے ادھو ٹھاکرے کے خلاف متنازعہ بیان دیاتھا۔پیر کو ضلع رائے گڑھ میں’جن آشیرواد یاترا‘ کے دوران رانے نے کہاکہ یہ شرمناک ہے کہ چیف منسٹر نہیں جانتے کہ آزادی کے بعد کتنے سال ہو گئے ہیں۔ تقریر کے دوران انہیں پیچھے مڑ کر اس کے بارے میں پوچھ گچھ کرتے نظرآئے تھے۔ اگر میں وہاں ہوتا تو میں انہیں سخت تھپڑ مارتا۔خاص بات یہ ہے کہ رانے خود کبھی شیو سینا میں رہ چکے ہیں۔

مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ رہ چکے رانے پہلے شیو سینا میں تھے، بعد میں انہوں نے کانگریس میں شمولیت اختیار کی اور پھر 2019 میں وہ بی جے پی میں شامل ہوگئے۔ اس کے بعد مہاراشٹر کی سیاست گرم ہوگئی۔رانے کے اس بیان کی شیو سینا نے شدید مذمت کی۔ پارٹی کارکنوں نے ممبئی اور کئی دوسری جگہوں پر پوسٹر لگائے تھے جن میں رانے کو ’کومبڈی چور‘ (چکن چور) قرار دیا گیا تھا۔ رانے تقریبا پانچ دہائی قبل چیمبور میں ’پولٹری‘ کی دکان چلاتے تھے۔ نارائن رانے کے خلاف ناسک پولیس، ناسک سائبر اور پونے پولیس میں ایک کیس درج کیا گیا ہے۔ 36 ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔ پہلے دن 19 ایف آئی آر اور دوسرے دن 17 ایف آئی آر درج کی گئیں تھی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close