ہندوستان

یکم جنوری سے دیوبند تک ڈبل ٹریک پر ٹرینوں کی آمد ورفت شروع ہوگی

دیوبند، 5؍ دسمبر (رضوان سلمانی) یکم جنوری سے دیوبند تک ڈبل ٹریک پر ٹرینوں کی آمد ورفت شروع ہوجائے گی ، ایسے میں ٹرینوں کے اسٹوپج کے علاوہ کہیں دوسری جگہ رکنے کا خطرہ نہیں رہے گا۔ مظفرنگر سے دیوبند تک زیر تعمیر ڈبل ٹریک پر ٹرینوں کی چلانے کی اجازت دیدی گئی ہے ۔ دہلی ، سہارنپور ریلوے روٹ پر سنگل لائن کے سبب دونوں طرف کی ٹرینیں ساتھ چلانے میں پریشانی ہوتی تھی اس میں کسی ٹرین کو آگے نکالنے کے لئے دوسری ٹرین کو روکنا پڑتا تھا، غازی آباد سے لے کر سہارنپور تک اس سنگل لائن پر ایک وقت میں ایک ہی ٹرین چلائی جاتی تھی ، دوسال قبل محکمہ ریلوے نے ڈبل ٹریک کو ہری جھنڈی دی تھی ، اس کے ساتھ 800کروڑ روپے کا بجٹ بھی منظور کیا گیا تھا جس کے بعد پہلے مرحلے میں غازی آباد سے مودی نگر تک ڈبل ٹریک کا کام شروع ہوا، پھر مودی نگر سے سکوتی تک ڈبل لائن کی گئی ، سکوتی سے مظفرنگر تک ایک ساتھ کام شروع کرکے ڈبل ٹریک کی تعمیر کی گئی اس کے بعد ٹینڈر میں پھیر بدل کے سبب کچھ وقت کے لئے کام رک گیا تھا ، گزشتہ چھ ماہ کی معیاد میں مظفرنگر سے دیوبند تک ڈبل ٹریک کا کام کیا گیا، اس میں کینٹ اسٹیشن پر بٹ ویلڈنگ پلا نٹ کا فائدہ ملا ، یہاں 26-26میٹر کی پٹریاں لگائی گئیں۔ ویلڈنگ پلانٹ میں 26میٹر کی 10پٹریوں کو جوڑ کر 260میٹر لمبی پٹری بناکر بھیجی گئی۔ دوسری جانب ٹرینوں کے منسوخ ہونے سے فی الوقت مسافروں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑرہاہے ۔ دہرہ دون جانے والی 14ٹرینیں منسوخ ہیں، مسافر جب ریلوے اسٹیشن پر ٹرین پکڑنے کے لئے آتا ہے تو اسے معلوم ہوتا ہے کہ ٹرینیں منسوخ ہیں ، اس سے اس کی پریشانیوں میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ شتابدی ایکسپریس کو ہری دوار تک ہی چلایا جارہا ہے ، کئی ٹرینیں اپنے متعینہ وقت پر ہی نہیں پہنچ پارہی ہیں جس کی وجہ سے لوگ پریشان ہیں۔ ڈبل ٹریک ہونے کے بعد مسافروں کو سہولت ملے گی۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close