ہندوستان

بہن بیٹیوں کے ساتھ منھ کالاکرنیوالوں کو سرے بازار بھانسی دینے کا قانون بنایا جائے!شاہی امام پنجاب

ڈاکٹر پرینکا ریڈی کے ساتھ ہوئی ذیادتی نے پورے ملک کا سر شرم سے جھکا دیا

لدھیانہ1دسمبر ( مستقیم ) حیدرآباد میں گزشتہ روز خاتون ڈاکٹر پرینکا ریڈی کے ساتھ بلتکار کے بعد کئے گئے قتل کی سخت الفاظات میں مزمت کرتے ہوئے مجلس احرار اسلام ہند کے صدر و پنجاب کے شاہی امام مولانا حبیب الرحمن ثانی لدھیانوی نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ فوری طور پر بلاتکاریوں کو سرے بازار پھانسی دینے کا قانون بنائے ، مولانا حبیب الرحمن ثانی لدھانوی نے کہا کہ شرم کی بات ہے کہ آزاد ہندوسان میں خواتین کی حفاظت کیلئے کوئی ایسا ٹھوس قانون نہیں بنایا جا سکا جس سے بیٹیوں کی حفاظت ہو سکے ، انہوں نے کہا کہ دیش میں بیٹیوں کے ساتھ ہو رہی اس درندگی کو انجام دینے والے کوئی ودیشی نہیں ہیں بلکہاسی معاشرے میں پیدا ہونے والے وہ درندے ہیں جنکو کبھی گھر والوں نے یہ سمجھایا ہی نہیں کہ اپنے گھر کی طرح باہر نظر آنے والے ہر عورت قابل احترام ہے ، شاہی امام نے کہا کہ ان حادثات کے لئے کہیں نہ کہیں ہمارا لاچار قانون بھی ذمہ دار ہے جس میں قانونی ماہرین کی مدد سے ظلم کرنے والے بچ نکلتے ہیں ، شاہی امام نے کہا کہ قانون میں یہ اضافہ ہونا چاہئے کہ زنا اور قتل کے مقدمہ کا فیصلہ صرف پندرہ دن میں کیا جائے اور ملزم اگر مجرم ثابت ہوتا ہے تو معاشرے کی اصلاح کیلئے سر بازا ر پھانسی دی جائے تاکہ اور درندوں کو اس سے عبرت حاصل ہو عورت کی جانب بری نگاہ سے دیکھنے والے ہزار بار سوچنے پر مجبور ہوجائیں کہ اگر کچھ کیا تو انجام برا ہوگا ، ایک سوال کے جواب میں شاہی امام نے کہا کہ بیٹیوں کو اپنی حفاظت کے لئے فری آرم لائسنس بھی دیا جانا چاہئے ، انہوں نے کہا کہ ایسے معاملات میں درندوں کا مذہب معلوم کرکے سیاست کرنے والوں کو شرم سے ڈوب مرنا چاہئے کیونکہ بیٹی صرف بیٹی ہوتی ہے چاہئے ہندو کی ہو سکھ کی ہو یا مسلم کی ، شاہی امام نے کہا کہ اگرمرکز اور صوبائی سرکاریں بیٹیوں کی حفاظت بھی نہیں کر سکتی ہیں تو ان تمام ہوم منسٹروں کو استعفیٰ دے دینا چاہئے ،

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close