کھیل

کرکٹ کے میدان پر 124 سال بعد ہوا یہ کرشمہ ، اس کھلاڑی نے رقم کی نئی تاریخ

کرکٹ کے میدان پر 124 سال بعد ہوا یہ کرشمہ ، اس کھلاڑی نے رقم کی نئی تاریخ

انگلینڈ میں کاونٹی چمپئن شپ ڈویزن ون میں کھیل رہی کینٹ ٹیم کے کھلاڑی ڈیرین اسٹیوینس نے نئی تاریخ رقم کردی ہے ۔ ڈیرین اسٹیوینس نے میدان پر ایک ایسا کارنامہ انجام دیا ہے جو 124 سال بعد ہواہے ۔ ڈیرین اسٹیوینس نے یارکشائر کے خلاف پہلی اننگز میں شاندار ڈبل سنچری بنانے کے بعد دوسری اننگز میں گیند بازی میں بھی کمال کیا ۔ اسٹیوینس نے دوسری اننگز میں یارکشائر کے پانچ بلے بازوں کو اپنا شکار بنایا اور اسی کے ساتھ انہوں نے نئی تاریخ رقم کردی ۔

دراصل ڈیرین اسٹیوینس 43 سال کے ہیں اور ڈبل سنچری بنانے کے بعد ایک اننگز میں پانچ وکٹ لینے والے وہ دنیا کے دوسرے سب سے سن رسیدہ کھلاڑی ہیں ۔ اس سے پہلے 1895 میں ڈبلیو جی گریس نے 46 سال 303 دن کی عمر میں یہ کارنامہ انجام دیا تھا ۔

بتا دیں کہ یارکشائر کے خلاف اس میچ میں کینٹ کی ٹیم پہلی اننگز میں مشکل میں پھنس گئی تھی ۔ صرف 39 رنوں پر اس کے پانچ وکٹ گرگئے تھے ۔ اس کے بعد ڈیرین اسٹیوینس کریز پر آئے اور انہوں نے آتے ہی یارکشائر کے گیند بازوں پر حملہ کرنا شروع کردیا ۔ اسٹیوینس نے 225 گیندوں پر 237 رنوں کی اننگز کھیلی ۔ اس دوران انہوں نے 28 چوکے اور 9 چھکے لگائے ۔ سیم بلنگس کے ساتھ انہوں نے چھٹی وکٹ کیلئے 346 رنوں کی ہمالیائی شراکت داری کی ۔

اسٹیوینس نے پہلی اننگز میں بلے سے کمال دکھانے کے بعد دوسری اننگز میں اپنی گیندوں سے قہر ڈھایا ۔ اسٹیوینس نے یارکشائر کے خلاف دوسری اننگز میں پانچ وکٹ لئے ۔ یارکشائر کے ٹاپ چار بلے بازوں کو اسٹیوینس نے ہی آوٹ کیا ۔ بتادیں کہ ڈیرین اسٹیوینس اس کاونٹی سیزن کے پہلے کھلاڑی ہیں جو 500 سے زیادہ رن اور 50 سے زیادہ وکٹ لے چکے ہیں ۔

Show More

Related Articles

جواب دیجئے

Close