فقہ و فتاوی

بیٹوں کی موجودگی میں پوتی پوتے وارث نہ ہونگے! مفتی محمد عمران قاسمی

 

بیٹوں کی موجودگی میں پوتی پوتے وارث نہ ہونگے! مفتی محمد عمران قاسمی
================
*سوال(٢٣٣)* مفتیان کرام سے گزارش ھے،درج ذیل سوال کا جواب مطلوب ہےکہ زید کے صرف دو بیٹے ہیں١: عمرو، ٢:بکر،اور ابھی ساری جائداد زید کی ملکیت میں ہے کہ اچانک عمرو کا انتقال ہوگیا تو بتائيں زید کے انتقال کے بعد عمرو کی اولاد اپنے دادا کی جائداد کی وارث بنے گی؟
خوب سمجھ کر مدلل جواب ارسال کریں۔
*(المستفتی: ارشاداحمد*
*کھجوری یوپی)*
________________
*باسمہ سبحانہ تعالیٰ*
*الجواب وباللٰہ التوفیق ومنہ الصدق والصواب*:بیٹوں کی موجودگی میں دادا کی جائيداد میں پوتوں اور پوتیوں کو وراثت نہیں ملتی، تو چونکہ دریافت کردہ صورت میں بیٹا بکر موجود ھے لہذاپوتوں پوتیوں(مرحوم بیٹے کی اولاد ) کو دادا کی میراث میں حصہ نہیں ملے گا، البتہ دادا کو دو حق پوتوں اور پوتیوں کے سلسلہ میں دیئے گئے، ایک تو یہ حق ہے کہ ان کی مصلحت وضرورت کے تقاضے سے کچھ زمین وجائداد اپنی زندگی ہی میں انھیں دے کر قابض ومالک بنادے، دوسرا حق یہ ہے کہ ان کے لیے اپنی مملوکہ جائداد میں سے ایک تہائی کے اندر اندر وصیت کردے،تاکہ پوتے پوتیاں تہی دست نہ رہ جائیں.(فتاوی دارالعلوم : ٥٥٥/١٧، جدید، آپکے مسائل اور انکا حل : ٤٤٨/٧،نعیمیہ دیوبند، نوازل: ٤٢٨/١٨، مراآباد، قاسمیہ : ٥٠٦/٢٥، اشرفی دیوبند)
ثم العصبات بأنفسهم أربعة أصناف: جزء الميت، ثم أصله، ثم جزء أبيه ثم جزء جده وقدم الأقرب فالأقرب منهم بهذا الترتيب، فيقدم جزء الميت كالابن ثم ابنه وإن سفل إلخ .(الدرالمختار مع الشامي:۴۲۷/١٠، کتاب الفرائض، فصل في العصبات)
والثالثة من أحوال بنات الابن : یسقطن بالابن الصلب.(شامی : ٥١٨/١٠، زکریا دیوبند)
الهبة عند مشروع …….. ونصح بالإيجاب والقبول والقبض ………….. والقبض لا بد منه لثبوت الملک.(هداية:٢٨١/٣کتاب الهبة).
الوصية غير واجبة وهي مستحبة ………. ولا تجوز بما زاد على الثلث لقوله عليه السلام ……. الثلث والثلث کثير.(هداية :۴ : ۹۵ کتاب الوصايا)۔
*فقط واﷲتعالیٰ أعلم* ___________________
✒ *کتبہ :احقر*
*محمد عمران غفرلہ*
*دارالإفتاءوالإرشاد*
*زیراھتمام جامع مسجد*
*وائٹ فیلڈ بنگلور*
*15/3/1441*
*مطابق*
*13/11/2019*
*چہار شنبہ*
*MB:9454007434*
*E-mail ID:*
*Imranqasmi1501@*
*gmail.com*
*You Tube channel:*
*التذکیر والتبشیر*
*Attazkeer*
*Wattabsheer*

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close