فقہ و فتاوی

بے ہوشی کی حالت میں طلاق کاحکم ؟ مفتی محمد عمران قاسمی

بے ہوشی کی حالت میں طلاق کاحکم ؟ مفتی محمد عمران قاسمی

===============
*سوال(٢١٠):* السلام علیکم ورحمة اللہ وبرکاتہ ! حضرت ایک مسئلہ بتادیں کہ زید نے اپنی بیوی کو بے ہوشی کی حالت میں طلاق دےدی تو کیا طلاق پڑے گی کہ نھیں ؟
*(المستفتی : عبد الحسیب*
*منی پوری)*
_________________
*باسمہ سبحانہ تعالیٰ*
*الجواب وباللٰہ التوفیق ومنہ الصدق والصواب*:اگر کوئی شخص بیماری یا کسی اور سبب سے بے ہوش ہوجائے اور اِسی بے ہوشی میں وہ طلاق کے الفاظ بولنے لگے ، تو اس سے کوئی طلاق واقع نہ ہوگی ۔{کتاب المسائل :٧١/٥، فرید دھلی )
ولا یقع طلاق … المغمی علیہ۔(الفتاویٰ الہندیۃ،کتاب الطلاق / فصل فیمن یقع طلاقہ وفیمن لا یقع طلاقہ، الدر المختار مع الشامي / کتاب الطلاق :۴ ؍ ۴۵۲ زکریا ، بزازیۃ علی ہامش الفتاویٰ الہندیۃ: ۴ ؍ ۱۷۰ زکریا،دیوبند )
*فقط واﷲتعالیٰ أعلم* ___________________
✒ *کتبہ :احقر*
*محمد عمران غفرلہ*
*دارالإفتاءوالإرشاد*
*وائٹ فیلڈ بنگلور*
*15/2/1441*
*مطابق*
*15/10/2019*
*منگل*
*MB:9454007434*
*E-mail ID:*
*Imranqasmi1501@*
*gmail.com*
*You Tube channel:*
*التذکیر والتبشیر*
*Attazkeer*
*Wattabsheer*

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close