عجیب و غریب

دولہن کی کارروک کر مارپیٹ اور لوٹ کے معاملے میں پولیس نے چار ملزمان کے خلاف سنگین دفعات میں مقدمہ قائم کیا دو ملزمان پولیس حراست میں

دیوبند: 4 دسمبر (رضوان سلمانی) دولہن کی کارروک کر مارپیٹ اور لوٹ کے معاملے میں پولیس نے چار ملزمان کے خلاف سنگین دفعات میں مقدمہ قائم کیا ہے ۔ دیوبند پولیس نے دو ملزمان کو حراست میں لے کر تحقیق شروع کردی ہے ، جب کہ حراست میں لئے گئے نوجوانو ںکے اہل خانہ نے سازش کے تحت دونوں نوجوانوں کو جھوٹے مقدمہ میں پھنسانے کا الزام عائد کیا ہے۔ اہل خانہ نے ایس ایس پی سے معاملہ کی منصفانہ طریقے پر تحقیق کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ موصولہ اطلاع کے مطابق دیوبند کے قریبی گائوں چندینا کولی کے رہنے والے نقلی رام نے پولیس کو دی تحریر میں الزام عائد کیا تھا کہ 29نومبر کو اس کی لڑکی کی شادی تھی ، ریاست اتراکھنڈ کے گائوں پوہانہ سے بارات آئی ہوئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ شادی کی رسمیں پوری ہونے کے بعد بارات کی بس تو نکل گئی لیکن دولہا اور دولہن کی کار سمیت دو دیگر کار گائوں میں رک گئی ، وداعی کی رسم پوری ہونے کے بعد جیسے ہی دولہا اور اس کی بہن کار میں بیٹھ کر گھر کے لئے نکلے تو الزام ہے کہ تلہیڑی بزرگ ریلوے کراسنگ کے نزدیک پیچھے سے آئی کار نے ان کی کار کو اوور ٹیک کرتے ہوئے راستہ روک لیا اور کار میں سوار تین نوجوانوں نے اس کی بہن اور دیگر لوگوں کے ساتھ مارپیٹ شروع کردی ، الزام ہے کہ نوجوان اس کی بہن کے گلے کا ہار ، انگوٹھی سمیت دیگر سونے کے زیورات لوٹ کر فرا ر ہوگئے ، گزشتہ کل دیوبند کوتوالی پولیس نے ایس ایس پی کے حکم پر چندینا کولی کے رہنے والے بلوان اور سمت سمیت دو دیگر افراد کے خلاف لوٹ اور مارپیٹ کی دفعات میں مقدمہ قائم کیا ہے ۔ تھانہ انچارج وائی ڈی شرما نے بتایا کہ دو ملزمان کو حراست میں لے کر تحقیق کی جارہی ہے ، فرار دو دیگر ملزمان کی شناخت کراکرانہیں بھی حراست میں لیا جائے گا، جب کہ بلوان کے والد نرہار سنگھ نے بتایا کہ کار کی سائڈ لگنے کے بعد ان کے لڑکے کے ساتھ دوسری کار میں سوار افراد کے درمیان کہا سنی ہوگئی تھی لیکن پولیس بغیر تحقیق کئے ان کے خلاف فرضی مقدمہ قائم کیا گیا ہے۔ انہوں نے ایس ایس پی سے معاملے کی منصفانہ تحقیق کرانے اور انصاف کا مطالبہ کیاہے۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close