عجیب و غریب

باپ بیٹی کے مقدس رشتہ کو کیا داغدار سگے باپ نے بیٹی کی عزت کی تار‌ تار 

چکھلی ضلع بلڈانہ 3 دسمبر( ذوالقرنین احمد ایچ یو ٹی )
شراب کو تمام بے حیائی کی جڑ کہا گیا ہے، جتنے بھی جرائم پیشہ افراد ہوتے ہیں وہ کہی نا‌کہی نشے کی لت سے جڑے ہوتے ہیں، اور جتنے جرائم نشے کی حالت میں ہوتے ہیں اتنے عام طور پر نہیں ہوتے ہیں، شراب معاشرے کے بگاڑ میں سب سے بڑی وجہ ہے اسکے وجہ سے انسان ذہنی طور پر مفلوج ہوجاتا ہے، نا اسے صحیح غلط کی تمیز ہوتی ہے اور نا حرام و حلال کی اسی لے اسلام میں ہر نشہ آور چیز کو حرام قرار دیا ہے ۔ تاکہ جرائم کے پھیلنے کی جڑ کو ہی ختم کردیا جائے۔ حال ہی حیدرآباد میں ڈاکٹر پرینکا ریڈی کے ساتھ انسانیت سوز ظلم و تشدد سے ملک شرم سر ہوا ہے، اور پورے ملک میں اسکے خلاف احتجاج جاری ہے۔
چکھلی تعلقہ کے دیہات میں شرابی باپ نے اپنی سگی نا بالغ بیٹی کے ساتھ ایسا گھناؤنا فعل انجام دیا جس انسانیت کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔ سگے خون کا مقدس رشتہ پامال کردیا ہے۔
 ایک عادی شرابی باپ نے تمام حدیں عبور کرکے اپنی اکلوتی نابالغ بیٹی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا کر باپ بیٹی کے مقدس رشتے کو داغدار کردیا ہے۔ اس نے یہ فعل ایک بار نہیں بلکہ بار بار کیا ہے ، جس کی وجہ سے بیٹی نے اپنے والد کے خلاف تھانے میں ایف آئی آر درج کروائی ہے ، جس کے بعد پولیس نے نڈھال والد کو گرفتار کرکے جیل کی سلاخوں کے پیچھے بھیج دیا۔
پولیس کو موصولہ اطلاعات کے مطابق ضلع بلڈانہ کی تحصیل چکھلی کے تحت واقع ایک گاؤں کے رہائشی 16 سالہ لڑکی نے پولیس کو اپنی شکایت میں بتایا ہے کہ اس کی والدہ ڈیڑھ ماہ کی عمر میں اس وقت فوت ہوگئی تھی ، جس کے بعد باپ نے دوسری شادی کرلی۔ لیکن والد کی شراب کی لت کی وجہ سے سوتیلی ماں بھی چلی گئی اور اب دادی اپنے والد کے ساتھ رہتی ہیں۔ خراب معاشی حالات کی وجہ سے اسے تعلیم چھوڑنا پڑی۔ متاثرہ لڑکی  نے اپنی رپورٹ میں مزید بتایا ہے کہ ، 2 ماہ قبل باپ نے اسے سر درد کی گولی کھلایا جس کی وجہ سے وہ گر پڑی اور پھر باپ نے اس کی چارپائی پکڑی اور اس کے کپڑے اتارے اور گندی حرکت کرنے لگی اور متاثرہ کو نیند آرہی ہے۔ گیا ہے۔ اگلے دن ، متاثرہ لڑکی نے اپنی نانی کو بتایا کہ اس کے پیٹ میں درد ہے لیکن دادی نے توجہ نہیں دی۔ اس کے بعد باپ نے کئی بار اسے گولی کھلا کر یہی کام کیا۔ آخر ایک دن ، متاثرہ شخص نے اپنی دادی اور گھر والوں کو اس واقعے کے بارے میں بتایا ، پھر ملزم والد کو بھی سمجھایا گیا۔ اس کے بعد باپ نے متاثرہ  کو زدوکوب کیا اور دھمکی دی کہ اگر میں سامنے سے کسی کو کچھ بتاؤں تو میں اسے جان سے مار دوں گا۔ یکم دسمبر کو ، جب باپ نے ایک بار پھر ملزم نے متاثرہ شخص کو گولی کھانے  کو کہا تو متاثرہ نے انکار کردیا لیکن باپ نے زبردستی گولی کھلا کر اسے دوبارہ کام کیا۔ دوسرے دن یعنی 2 دسمبر کو باپ کی ان حرکتوں سے تنگ آ کر متاثرہ باپ کے خلاف پولیس شکایت درج کروانے کے لئے چکھلی شہر پہنچی لیکن وہ گھبرائی۔ اس کو ایسی حالت میں دیکھ کر راحت کرانتی سنگھاٹن کے ودربھ پردیش کے صدر پرشانت دھور پاٹل ، صحافی یوسف شیخ اور کچھ دیگر لوگوں نے مقامی پولیس کو بتایا ، تب چکھلی پولیس نے متاثرہ لڑکی کی آواز سنی اور اسے بتایا کہ اسے انڈیرا پولیس اسٹیشن لے جایا گیا جہاں متاثرہ کی شکایت ہے۔ پولیس نے ملزم والد کے خلاف عصمت دری اور پوسکو ایکٹ کے تحت جرم درج کرکے ملزم کے والد کو گرفتار کرلیا ہے۔ تھانیدار نریندر ٹھاکرے کے ذریعہ اس معاملے کی مزید تفتیش کی جارہی ہے۔ باپ اور بیٹی کے مقدس رشتے کو داغدار کرنے والے اس واقعہ سے پورے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے اور لوگ ملزمان کو سزائے موت دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔
مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close