عجیب و غریب

جھارکھنڈ میں موب لنچنگ، مبارک انصاری کوپیٹ پیٹ کرمارڈالا۔ اخترانصاری کا پولیس کی نگرانی میں علاج

 

جھارکھنڈ میں بوکارو ضلع بیرموانومنڈل کے بوکارو تھرمل تھانہ کے تحت گووند پورکالونی میں چوری کے الزام میں نئی بستی کے 48 سالہ باشندہ مبارک انصاری ولدیت محمد حسینی اوراخترانصاری ولدیت قربان انصاری کو منگل کی شب 12 بجے پرتشدد بھیڑ کے ذریعہ پٹائی کی گئی۔ مبارک انصاری کی موت اسپتال لے جانے کے دوران ہوگئی۔ وہیں اخترانصاری بری طرح زخمی ہے۔ زخمی اخترانصاری کا علاج پولیس کی نگرانی میں کرایا جارہا ہے۔

اس معاملے میں پولیس نے پانچ افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ جن کی گرفتاریاں ہوئی ہیں ان کے نام پریم چند مہتو ولدیت ہیم لال مہتو، پریم چند مہتو کے دونوں بیٹے کندن مہتو اورنندن مہتو، پریم چند مہتو کی بیوی نینی دیوی اور پریم چند مہتو کے ولد ہیم لال مہتو ہیں۔ یہ سبھی ساکن گووند پوربستی کے رہنے والے ہیں، انہیں گرفتارکرکے جیل بھیج دیا گیا ہے۔ ان لوگوں اوران کے علاوہ 7-6 نامعلوم افراد پربوکارو تھرمل پاور میں 6 نومبر کو 19/150، 120/323/307/302 /149/ 148/ 147/ آئی پی سی کے تحت کیس درج کیا گیا ہے۔

عجیب و غریب : بوکارو میں بیٹری چوری کے الزام میں مبارک انصاری کو پیٹ پیٹ کر مار ڈالا !

Posted by Hindustan Urdu Times on Thursday, 7 November 2019

بتایا جاتا ہے کہ پریم چند مہتواوران کے بیٹے گووند پورایسٹ پنچایت کے تحت سی سی ایل گووند پوراسپتال کےسامنے گاڑیوں کو دھونے کے لئے سروسنگ سینٹر چلاتے ہیں۔ ایک ہفتہ قبل ہی سروسنگ سینٹر میں چوری ہوئی تھی اورپانی کے پمپ سمیت دوسرے پائپ وغیرہ کی چوری ہوئی تھی۔ منگل کی رات تقریباً دو بجے پریم چند مہتو کی بیوی نینا دیوی ضرورت کے لئے سروس سینٹر میں اپنے گھرسے باہر نکلی تو دیکھا کہ دوافراد گاڑی کی بیٹری چوری کرکے لے جارہے ہیں۔ نینا دیوی نے شورمچایا تو گھرکے سبھی لوگ دوڑ پڑے اوردونوں چوروں کو پکڑ لیا اور سروسنگ سینٹر کے باہر پڑے ہوئے ایک بجلی کے پولس سے انہیں باندھ دیا، اس کےبعد ان لوگوں نے واقعہ کی اطلاع گووند پور بستی میں رہنے والے لوگوں کودی۔

بتایا جاتا ہے کہ اطلاع ملتے ہی بستی سے رات میں کافی تعداد میں لوگ سروس سینٹرمیں جمع ہوگئے۔ بھیڑ کے دوران پوچھے جانے پر 48 سالہ شخص نے اپنا نام مبارک انصاری ولد مرحوم محمد حسینی اور دوسرے نے اخترانصاری ولد قربان انصاری عمر 26 سال اورنئی بستی کا رہنے والا بتایا۔ ہجوم نے دونوں کی جم کر پٹائی کی، پھرصبح تقریباً پانچ بجے کسی نے اس واقعہ کو دیکھ کرپولیس کو اطلاع دی۔ اس کے بعد موقع پرپولیس پہنچی اور دونوں کو علاج کے لئے اسپتال لے کرپہنچی۔ حالانکہ راستے میں ہی مبارک انصاری کی موت ہوگئی جبکہ اخترانصاری زیرعلاج ہے۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close