دیوبند

دیوبند کے طلباء پر دستور مخالف CAB بل کے خلاف احتجاج میں درج کیا گیا مقدمہ جمعیۃ علماء ہر سطح پر لڑائی لڑے گی

دیوبند 15؍دسمبر (رضوان سلمانی) جمعیۃ علماء ہند کے قومی سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی نے کہا کہ جن بچوں (مدرسہ کے طلباء) کے خلاف دیوبند میں دستور مخالف CAB بل کے خلاف احتجاج میں نامزد اور نامعلوم مقدمہ درج کیا گیا ہے، پریشان نہ ہوں، جمعیۃ علماء انکے لئے ہر سطح پر لڑائی لڑے گی۔آج دیوبند میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا حکیم الدین قاسمی نے کہا کہ ملک کے آئین نے ہر فرد کو حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف آواز اٹھانے کا حق دیا ہے۔ اس حق کے تحت جمعیۃ علماء نے ملک بھر میں سی اے بی کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔ مولانا نے کہا کہ ملک میں مہنگائی اور بے روزگاری عروج پر ہے، لوگ پریشان ہیں کہ مرکزی حکومت ان معاملات سے لوگوں کی توجہ ہٹانے اور اپنی ناکامی کو چھپانے کے لئے سی اے بی جیسا بل لا رہی ہے۔ کہا جاتا ہے کہ جس طرح سی اے بی کو عجلت میں لایا گیا، پورا ملک ابل رہا ہے، لوگ بے چین ہیں، ایسی صورتحال میں یہ ہونا لازمی ہے۔ مولانا نے کہا کہ دیوبند میں مظاہرے کے دوران مدرسہ طلبہ کی وجہ سے روڈ جام کو بھی درست نہیں سمجھا جاتا ہے، لیکن اس معاملے میں معاملات درج کرنا امتیازی سلوک ہے۔ کیونکہ اسی دن ہی کسانوں نے دیوبند سے کچھ فاصلے پر سڑک بلاک کردی تھی اور انتظامیہ نے ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ان بچوں کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے جن کے خلاف مقدمات درج ہیں، جمعیۃ اپنی تمام لڑائی لڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم مقامی انتظامیہ سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس معاملے کو سنجیدگی کے ساتھ اٹھائیں اور نامزد اور نامعلوم افراد کے خلاف درج مقدمے کو ختم کریں۔ ورنہ جمعیۃ قانونی لڑائی لڑے گی۔بعد ازاں مولانا حکیم الدین قاسمی احتجاجی مظاہرے میں نامزد دیوبند اسلامک اکیڈمی کے ڈائریکٹر مہدی حسن عینی قاسمی کے گھر بھی گئے اور وہاں ان کے والد سے ملاقات کی اور انہیں یقین دہانی کرائی کہ جمعیۃ علماء ہند ان کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑی ہے ،انہوں نے کہا کہ اس ملک کے لئے ہمارے بزرگوں نے قربانی دی ہیں اگر ہمیں کچھ قربانیاں ملک کو بچانے کے لئے دینی پڑی تو ہم اس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے ،اس موقع پر مولانا جمال قاسمی ،سید ذہین احمد ،محمود الرحمن کے علاوہ شہر کے سرکردہ افراد موجود رہے اور انہوں نے بھی اس موقع پر بھرپور حمایت کا اعلان کیا ،واضح ہو کہ گذشتہ جمعہ جمعیۃ علماء کے تحت منعقدہ احتجاجی مظاہرے میںکانگریس کے نائب صوبائی صدر عمران مسعودنے بھی مقامی انتظامیہ کو انتباہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر طلباء کو گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی تو ان کے ساتھ بڑی تعداد میں شہر کے افراد گرفتاریاں دیں گے ۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close