بہار و سیمانچل

بائیکاٹ این آر سی ، عدم تعاون کی تحریک

نوادہ۔۔(محمد سُلطان اختر نمائندہ ہندوستان اردو ٹائمز)

این آر سی پر ، امت شاہ جی نے حکومت کے نظریہ کو واضح کیا ہے کہ
گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے کسی غیر مسلم پر این آر سی لاگو نہی ہوگا سبھی غیر مسلموں کو شہریت دینگے،
یعنی  شہریت مسلمانوں کے علاوہ سب کو دی جائے گی۔
مطلب حکومت کا ارادہ مسلمانوں کو براہ راست نشانہ بنانا پریشان اور ہراساں کرنا ہے۔
حکومت اسی ہندو قوم کے ایجنڈے پر کام کر رہی ہے جس میں مسلمانوں کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے۔
اب 30 کروڑ مسلمانوں کو نہ تو ہلاک کیا جاسکتا ہے اور نہ ہی انہیں جلاوطن کیا جاسکتا ہے ، لہذا انہیں ڈرایا جارہا ہے۔
  اور جو خوفزدہ ہو گیا سمجھو وُہ مرگیا وہ سنگھ کے متاثر حکومت کا ایجنڈا ہے۔
اب یہ مسلمانوں پر منحصر ہے کہ ہم کیا کریں؟
وہ کچھ بھی کریں گے جس کی وجہ سے انہیں پریشان و ہراساں کیا جائے گا۔
ایک آسان سا طریقہ ہے کہ پورے ملک کے مسلمان این آر سی کے خلاف عدم تعاون کی تحریک شروع کریں۔
کوئی بھی مسلمان این آر سی کے لئے کوئی کاغذ پیش ہی نہیں کرے۔
حکومت نہ تو پورے 30 کروڑ مسلمانوں کو جیل میں ڈال سکتی ہے اور نہ ہی وہ ملک سے بے دخل کر سکتی ہے۔
لیکن اس کے لئے دلالوں سے گریز کرنا ہوگا کیوں کہ
وہ این آر سی کے فوائد بتائیں گے اور جب آپ این آر سی کے لئے دستاویزات پیش کریں گے تو پھر کروڑوں مسلمانوں کو غیر ملکی بتا کر تشدد کا نشانہ بنایا جائے گا۔تو آگے آئیں
unity اتحاد میں طاقت ہے ، این آر سی کے خلاف متحد ہو کر کھڑے ہوں۔
باقی آپ کی مرضی ،
  یہ مت سمجھیں کہ اگر آپ کا نام NRC میں مل گیا تو آپ بچ جاؤگے پھر دوسرے راستے سے
  آپ کو ڈرانے ، دھمکانے ، تشدد کرنے ، بزدل بنانے کا دوسرا راستہ نکا لیں گے
اب بائیکاٹ این آر سی عدم تعاون تحریک چلانے کے سوا کوئی دوسرا راستہ نہیں ہے!
احتجاج ، دھرنا ، مظاہرے ، ہڑتال ، جلوس ، ریلیوں کے ذریعے حکومت کو آگاہ کرنا بہت ضروری ہے۔
اور یہ کام ہماری قوم کو پورے ملک میں قومی سطح پر کرنا ہوگا!
یہاں کوئی مسلم سیاسی جماعت یا تنظیم نہیں ہے جو پورے ملک میں پھیلی ہوئی ہو
اس کے لئے ، تمام مسلم سیاسی جماعتیں ، تنظیمیں ، علماء، قوم کے رہنماؤں ، لیڈر ، فکر مندوں،خدمتِ گار وں کو آگے آنا ہوگا۔
  پورے ملک کے ہر گاؤں گاؤں میں جہاں مساجد موجود ہیں ، وہاں پر یقیناً ایک علماء موجود ہوتے ہیں۔
لہذا بائیکاٹ این آر سی عدم تعاون کی تحریک کو قومی سطح پر کامیاب بنانے کے لئے ، ‘علماء کی مدد لینا اس وقت قوم کے لئے بہترین اور آسان طریقہ کار ہوگا۔
اپنے قوم کے بھائیوں کی تھوڑی بہت فکر کرلیں۔
خود کو کمزور مت سمجھیں۔
اس تحریک کے لئے عبد اللہ اعظم بہت جلد نوادہ میں احتجاجی مظاہرہ کریں گے تاریخ کا تعین نہیں کیا گیا ہے عنقریب تاریخ کا اعلان کیا جائے گا۔۔

Show More

Related Articles

جواب دیجئے

Close