اہم خبریں

سماج وادی پارٹی لیڈر کارتک رانا نے بی جے پی اسمبلی رکن سمیت ضلع کے لیڈران پر بدعنوانی کا لگایا الزام

دیوبند: 4 دسمبر (رضوان سلمانی) سا بق ریاستی وزیر آنجہانی راجندرسنگھ کے صاحبزادے اور سماج وادی پارٹی لیڈر کارتک رانا نے دیوبند اسمبلی رکن سمیت ضلع کے بی جے پی لیڈران پر بدعنوانی کو چھپانے کے لئے تحصیل رامپور منہیاران مسئلے میں ان کے خلاف کارروائی کرائی جارہی ہے ۔ انہوںنے انتظامیہ سے سوال کیا کہ جب ان کی شکایت پر ضلع مجسٹریٹ نے تحصیل دار پر کارروائی کی ہے تو ان کے خلاف مقدمہ کیوں درج کیا گیا۔ موصولہ اطلاع کے مطابق دیوبند اسمبلی حلقے کے رام پور منہیاران تحصیل سے منسلک گائوں میں زمینی تنازعہ کو لے کر ہورہی بدعنوانی کی آواز اٹھارہے سماج وادی یوجن سبھا کے سابق قومی عہدیدار کارتک رانا نے ان پر ایس سی ؍ ایس ٹی کے تحت تین روز بعد ہورہی کارروائی بی جے پی حکومت کی شبیہ کو بچانے کے لئے کی جارہی ہے۔ آج مجنوں والا روڈ پر واقع ایک ہوٹل میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کارتک رانا نے کہا کہ ضلع مجسٹریٹ نے وائرل ویڈیو کی بنیاد پر جب تحصیل دار کے خلاف کارروائی کرادی ہے تو اب وہ کس کے دبائو میں ان کے خلاف کارروائی کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس مسئلے کو لے کر خاموش نہیں بیٹھیں گے اور سڑکوں پر اترکر آرپار کی لڑائی لڑیں گے، حالانکہ کارتک رانانے کہاکہ ایس ڈی ایم دیوبند اور ایس ڈی ایم رامپور منہیاران ان سے اس مسئلے کو طول نہ دینے کو لے کر رابطہ کررہے ہیں لیکن وہ بدعنوانی کے خلاف اپنی لڑائی سے پیچھے نہیں ہٹنے والے ہیں۔انہوں نے انتظامیہ کو انتباہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر ان کے یا پارٹی کارکنان کے خلاف مقدمہ قائم کیا جاتا ہے تو وہ ہزاروں کی تعداد میں لوگوں کے ساتھ گرفتاری دینے کے لئے تیا رہیں۔ کارتک رانا نے دیوبند بی جے پی اسمبلی رکن پر سرکاری بدعنوا نی میں ملوث ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ وہ بی جے پی کارکنان کے ساتھ مل کر گائوں کے باشندوں کی حق کی آواز کو دبانے کی کوشش کررہے ہیں ۔ را نا نے کہا کہ وہ علاقے کے عوام کے حق کی لڑائی لڑتے رہیں گے اور وہ کسی سے خوفزدہ نہیں ہوںگے۔ انہو ںنے کہا کہ بی جے پی لیڈران لوگوں کے حقوق کو پامال کررہی ہے اور جو انسان بی جے پی کے خلاف آواز بلند کرتا ہے تو انہیں جھوٹے مقدمات میں پھنساکر جیل بھیجا جارہا ہے ۔ مگر اب ان کی یہ پالیسی ہم کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ علاقے کے لوگ یہاں کے بی جے پی لیڈران کی پالیسی کو سمجھ چکے ہیں اور وہ بی جے پی سے آر پار کی لڑائی لڑنے کو تیار ہیں ۔ انہوں نے کارکنان سے اپیل کی کہ وہ بے خوف ہوکر مظلوم عوام کی خدمت کریں اور بی جے پی کی عوام مخالف پالیسیوں کو عوام تک پہنچائیں۔ اس دوران سکھ پال رانا، موہن رانا، روبن سنگھ وغیرہ موجود رہے۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close