حالات حاضرہ پر بزم سخن کے طرحی مشاعرہ میں پیش کردہ کلام! از : شاعر سیمانچل قاری عبدالباری زخمی ارریاوی

حالات حاضرہ پر بزم سخن کے طرحی مشاعرہ میں پیش کردہ کلام

 از : شاعر سیمانچل قاری عبدالباری زخمی پریم نگر ارریاوی

یقیں ہے مجھ کو سہارا مرا خدا دے گا 

رہِ فلاح پہ اک دن مجھے  چلا دےگا 

یہی کہاہے مرے دل نے بارہا مجھ سے

 کہ جس نے درد دیا ہے وہی دوا دے گا

جو خودغرض ہے کبھی اس پہ اعتبارنہ کر

 ملاکہ جام میں وہ زہر بھی پلا دےگا

امید رحم کی ظالم میں کیا کروں تجھ سے

علاوہ ظلم کے تو خود کسی کو کیا دے گا

اٹھو جوانوں اٹھو روکو ظلم کا طوفاں

اگر نہ جاگے تہ خاک وہ سلا دے گا

بجھانا ہوگا تجھے مالی نفرتوں کاچراغ 

نہیں تو سارے گلستاں کو یہ جلا دے گا  

سرور و کیف سا محفل میں چھائے گا

زخمی تیری غزل کو اگر کوئی گنگنا دے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں