اشعار و غزل

   غزل : ترے دل کی صباحت کی ابھی تشہیر باقی ہے! عامر قمر سالار پوری

       غزل   

   عامر قمر سالار پوری    

ترے دل کی صباحت کی ابھی تشہیر باقی ہے
ترے رنگین خوابوں کی ابھی تعبیر باقی ہے

ابھی الفاظ کے سانچے میں ہم نےتُجھ کو ڈھالا ہے
تُو اظہارِ محبت کر ابھی تفسیر باقی ہے

یہ کہہ کر ظلم کی ظالم نے مُجھ پر اِنتہا کر دی
تری آنکھوں میں اب تک قوّتِ نم گیر باقی ہے

تُو اُلفت کو عداوت کی نظر سے دور رکھتا ہے
تری باتوں میں اردو کی وہی تاثیر باقی ہے

قیادت میں محبّت کی مسافت کر تو لوں لیکن
رہِ اُلف میں شاید ہی کوئی رہ گیر باقی ہے

ترے ارماں جو دل میں ہی ,قمر, دم توڑ دیتے ہیں
یقیناً تیرے ماضی کی کوئی تقصیر   باقی ہے

عامر قمر سالار پوری
رابطہ نمبر،،،6396567639

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close