اشعار و غزل

غزل : محبت نفرتوں کو دیکھئے کیسے مٹاتی ہے! پریم ناتھ بسملؔ

غزل
پریم ناتھ بسملؔ
رابطہ۔8340505230

محبت نفرتوں کو دیکھئے کیسے مٹاتی ہے
سنا ہے دشمنوں کو بھی ہماری یاد آتی ہے
کمی مجھ میں نہیں کچھ بھی مگر پھر بھی بھٹکتا ہوں
کروں بھی کیا حکومت میرا حق بھی مار جاتی ہے
مسلماں ہوں،کہ ہندو ہوں،مگر جو کچھ ہوں انساں ہوں
سلیقہ بات کرنے کا مجھے اردو سکھاتی ہے
جوانی میں بہت کچھ آسماں سے توڑ لاتے تھے
بڑھاپا ہے،اندھیرا ہے، یہ شمع جھلملاتی ہے
بہت دن ہو گئے،دیکھا نہیں ہے،لَوٹ بھی آؤ
تمہاری یاد اے دلبر مجھے ہردم رلاتی ہے
نہ جانے لکھ دیا ہے تو نے کس انداز سے خط کو
تِری تحریر تیرے خط کو خود پڑھ کر سناتی ہے
لطافت بھی،فصاحت بھی،راونی بھی،جوانی بھی
تِری ہر بات سے خوشبو کسی بسملؔ کی آتی ہے

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close